جنت میں آدھی آبادی ہماری ہوگی

حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالی عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے ہم سے فرمایا کہ کیا تم اس بات سے راضی نہیں ہو کہ جنت میں تمھاری تعداد تمام جنتیوں کی چوتھائی ہو؟ 
حضرت ابن مسعود فرماتے ہیں کہ ہم نے خوشی سے نعرۂ تکبیر بلند کیا! پھر حضور ﷺ نے فرمایا:
کیا تم اس بات سے راضی نہیں ہو کہ جنت میں تمھاری تعداد تمام جنتیوں کی تہائی ہو؟ 
حضرت ابن مسعود فرماتے ہیں کہ ہم نے خوشی سے نعرۂ تکبیر بلند کیا! پھر حضور ﷺ نے فرمایا:
مجھے امید ہے کہ جنت میں تمھاری تعداد تمام جنتیوں سے آدھی (پچاس فی صد) ہوگی-

(ملتقطاً: صحیح مسلم، باب بیان کون ھذہ الامۃ.... الخ، ر437)

حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ تعالی عنہ کی روایت میں ہے کہ آپ ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ اس ذات کی قسم جس کے قبضۂ قدرت میں میری جان ہے، میری خواہش ہے کہ تم تمام جنتیوں کے نصف (آدھے) ہو-

(ایضاً، ر440، ملتقطاً) 

اس امت پر یہ مہربانی صرف اور صرف حضور ﷺ کی وجہ سے ہے-
اس حدیث سے ان فرقوں کا رد بھی ہو جاتا ہے جن کی تعداد ایک شہر بھرنے کے برابر بھی نہیں؛ وہ بھلا آدھی جنت کیسے بھریں گے؟ 
الحمدللہ حضور ﷺ نے یہ بشارت سواد اعظم، اہل سنت و جماعت کو عطا فرمائی ہے-

عبد مصطفی

Post a Comment

Leave Your Precious Comment Here

Previous Post Next Post