ہے وہ رحمت کا دریا ہمارا نبی

امام قاضی عیاض مالکی علیہ الرحمہ لکھتے ہیں:
ایک روایت میں ہے کہ حضور ﷺ نے حضرت جبریل علیہ السلام سے دریافت فرمایا کہ کیا میری رحمت سے تم کو بھی کچھ حصہ ملا ہے؟ عرض کی:

نعم، کنت اخشی العاقبة فامنت لثناء الله عزوجل علی بقوله "ذی قوۃ عند ذی العرش مکین مطاع، ثم امین" (التکویر:21،20)

ہاں، میں اپنے انجام و آخرت سے ڈرتا تھا، اللہ تعالیٰ نے میری مدح میں یہ آیت کریمہ "جو قوت والا ہے، مالک عرش کے حضور عزت والا وہاں اس کا حکم مانا جاتا ہے، امانت دار ہے" آپ ﷺ پر نازل فرمائی تو اب بے خوف ہوں۔

(انظر: الشفاء بتعریف حقوق المصطفی، ص58۔
و شفا شریف اردو، ص24، 25۔
و المواھب اللدنیة، ج3، ص170) 

ہمارے آقا ﷺ رحمت اللعالمین ہیں اور کوئی ایسا نہیں جسے آپ کی رحمت سے حصہ نہ ملا ہو۔

جس کی دو بُوند ہیں کوثر و سلسبیل 
ہے وہ رحمت کا دریا ہمَارا نبی

عبد مصطفی

Post a Comment

Leave Your Precious Comment Here

Previous Post Next Post