سب پہ نظر کرم

حضرت جریر رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مروی ہے کہ نبی کریم ﷺ ایک گھر میں داخل ہوئے تو گھر (لوگوں سے) بھر گیا۔
حضرت سیدنا جریر وہاں گئے تو (اندر جگہ نہ ہونے کی وجہ سے) گھر کے باہر بیٹھ گئے۔
نبی کریم ﷺ نے انھیں دیکھا تو اپنا ایک کپڑا لپیٹ کر ان کی طرف پھینکا اور فرمایا کہ اس پر بیٹھ جاؤ۔
حضرت سیدنا جریر نے کپڑا پکڑا اور اپنے چہرے پر لگا کر اسے بوسہ دیا۔

(انظر: الانوار فی شمائل النبی المختار اردو ترجمہ بہ نام شمائل بغوی، ص225، 226، ر245) 

صحابہ کی تعداد لاکھوں میں ہونے کے باوجود بھی ایسا نہیں ہوا کہ نبی کریم ﷺ کی نظر عنایت سے کوئی محروم رہا ہو۔ آپ ﷺ ہر ایک کی طرف متوجہ ہوتے تھے اور اسی طرح آپ ﷺ اپنی امت کی بھی خبر رکھتے ہیں۔

عبد مصطفی

Post a Comment

Leave Your Precious Comment Here

Previous Post Next Post