چلو سب وضو کریں


ایک مرتبہ رسول اللہ ﷺ محفل میں تشریف فرما تھے کہ کسی کی ریح (ہوا) خارج ہو گئی۔ بدبو محسوس ہونے پر آپ ﷺ نے فرمایا کہ جس شخص سے ریح خارج ہو گئی، اس کو چاہیے کہ اٹھ کر وضو کر آئے۔

شرم کی وجہ سے وہ شخص نہیں اٹھا تو آپ ﷺ نے پھر فرمایا کہ جس شخص سے ریح خارج ہوئی، اسے اٹھ کر وضو کر لینا چاہیے؛ اللہ تعالی حق بیان کرنے سے نہیں شرماتا۔


حضرت عباس رضی اللہ تعالی عنہ نے کہا:

یا رسول اللہ! کیا ہم سب اٹھ کر وضو نہ کر لیں؟ 


ایک روایت کے مطابق یہ واقعہ حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالی عنہ کی محفل میں پیش آیا۔


(کتاب الاذکیاء لابن جوزی، ص44) 


جب سب نے ایک ساتھ اٹھ کر وضو کیا تو جس کی ریح خارج ہو گئی تھی، وہ شرمندگی سے بچ گیا اور وضو بھی ہو گیا۔ اسے کہتے ہیں ایک تیر سے دو نشانے؛ اگر ہم اپنی عقل سے کام لیں تو اپنے سامنے کھڑے کئی مسئلوں کو با آسانی حل کر سکتے ہیں۔


عبد مصطفی

Post a Comment

Leave Your Precious Comment Here

Previous Post Next Post